جمعہ, اکتوبر 29, 2010

خاور کنگ

آدمی اپنے هم عصروں سے پہچانا جاتا ہے که
اس کی شخصیت کتنی قد آور هے
لاہور کے ٹی ہاؤس کے زمانے کے قد اور لکھاری اور صحافیوں نے بڑے نام چھوڑے هیں
اسی طرح
آج کی دنیا میں اردو کے بلاگر هیں
سبھی اپنی اپنی جگه نگینے هیں
سبھی خوب لکھ رهے هیں
اور وکی پیڈیا والے هیں جو عظیم لوگ هیں
جو راھ لله کام کیے جارهے هیں
ان اردو بلاگروں اور اردو کے وکی پیڈیا والوں کے زمانے میں خاور بھی زندھ ہے
اس لیے خاور کا خیال ہے که
کیونکہ اس کے هم عصر سارے لوگ عظیم هیں
اس لیے خاور کھوکھر بھی ایک گریٹ بندھ هے
خاور کے پنڈ (گاؤں ) کے لوگ سے پہلے هی اس کو خاور کنگ کہتے هیں .

7 تبصرے:

عثمان کہا...

خاور کنگ کی سب سے گریٹ بات یہ ہے کہ خاور کنگ سو الفاظ میں وہ کچھ کہہ جاتا ہے جو میرے جیسے بلاگراعظم ہزار الفاظ میں بھی نہیں کہہ سکتے۔
خاور کنگ آوے ای آوے !

افتخار اجمل بھوپال کہا...

خاور جی ۔ اے تے فير ہو گئياں نے موجاں ۔ بندہ وی گريٹ ہو گيا گھر بيٹھے بٹھائے ۔ پر سچی مُچی ؟

ھارون اعظم کہا...

چلیں جی پھر ہم بھی یہ کہہ سکتے ہیں کہ ہم خاور دی گریٹ کے عہد میں تھے۔ کیاخیال ہے؟

یا سر خوامخواہ جاپانی کہا...

ہم بھی کنگ کے دور میں ہیں۔
اور خاور کنگ کی بادشاہی میں!۔
مزے کی بات ہمارے اور خاور کنگ کے سسرالی بھی ایک ہیں۔
اوروں کا تو نہیں معلوم میریاں تے موجاں ہی موجاں۔

عنیقہ ناز کہا...

ایک ایسے وقت میں جب پاکستانیوں کو سمجھ نہیں آرہا کہ جمہوریت کو جپھی ڈالیں یا اسکو ساتھ لے کر آخرت کے سفر پہ روانہ ہوں آپ نے بادشاہت کا قصہ کیوں چھیڑ دیا۔

تانیہ رحمان کہا...

اب ہم کو پریشان ہونے کی کوئی ضرورت نہیں ہے ۔۔۔۔۔۔ خاور کھوکھر کے ہوتے ہوئے پاکستان کی عوام کو کچھ نہیں ہو سکتا ۔۔ ایک تو خاور کھوکھر اور ساتھ میں کنگ ۔ ماشا اللہ ،،،،،

کاشف نصیر کہا...

بلاگستان میں کئی کنگ ہیں اور کئی اعظم لیکن اکثر مجھ سی مظلوم رعایا۔۔۔۔۔۔۔۔

Popular Posts