جمعہ، 14 اپریل، 2006

ظالماں دے ظلم تے غريباں ديياں لاشاں

ميں نے نشترپارك والے حادثے ميں شەيد هونے والے عام اور معصوم كے قتل پر غم اور غصّے سے مغلوب ەو كر ايكـ پوسٹ
لكهى تهى ـ جس پر سعودى عرب سے ايكـ بەن مەر افشاں صاحبه نے كومنٹ لكهـ كر گاليوں كے معيوب ەونے كى طرف توجه دلوائى ـ اس كے بعد جناب اجمل صاحب نے بهى مەر افشاں بەن كى بات كى تائيد كر هوئےميرى اس پوسٹ كے نامعقول ەونے كالكها ـ
مگر ميرا يەاں لكهنےايسى باتوں كو لكهنے كا مقصد كچهـ اسطرح ەے
كه ميں اپنے معاشرے كے دوغلے پن كو اجاگر كررەا ەوں ـ يه لطائف جو ميں لكهتا ەوں ميرے بنائے ەوئے نەيں ەيں ـ بلكه ەمارے معاشرے ميں پەلے سے موجود هٍيں اور چهپ چهپا كر سنے سنائے جاتے هيں ـ
يا جو گالياں ميں نے لكهى ەٍيں يه ەمارے معاشرے ميں عام سى بات ەيں اور ذندگى كے كسى ناںكسىموڑپر ەر ادمى نے كسي كو دى ەوتى هيں ـ
ميں چاەتا ەوں كه ان بالغ اور نابالغ باتوں كو ايكـ حقيقت كے طور پر قبول كرے ەوئے ان كو عليحده كر ليں ـ
اس طرح هم ايكـ حد قائم كر سكتے هيں كه ەمارے بچے عمر سے پەلے ەى ايسى چيزوں تكـ نه پەنچ سكيں ـ
اور اگر ەم بالغوں كو ەى اس پته نه ەو گا يا ەم اس حد كى طرف سے انكهيں موند ليں گے تو آپنے بچوں كوكيسے بتائيں گے كه كەاں تكـ جانا ەے اور كەاں تكـ نەيں ـ
اس لئيے ميں ايكـ اور بلاگ بنا رەا هوں جس پر ميرى ايسى پوسٹيں هوا كريں گى جنميں پنجاب كے گلى كوچوں كى ذبان استعمال كى گئى ەو گى
جس طرح كه ميرا ايكـ بلاگ ەے بالغوں كے لطيفے ـ اس پر صرف بالغ لطيفے اوربالغ محاورے ەى لكهے جائيں گے ـ
اور دوسرا ەو گا تو بلاگەى مگر اس پر ايسى پوسٹيں ەوں گى جن ميں مجبورأ وقت كے فرعونوں كى ايسى كى تيسى كرنى پڑتى ەے ـ
تيسرا يه بلاگ جو ميں لكهـ رەا ەوں اور جو كه اردو سياره ايكـ ممبر بلاگ بهى ەےـ

ایک تبصرہ شائع کریں

Popular Posts