بدھ, اگست 3, 2011

رزق کی ایڈجسٹمنٹ

رزق کے متعلق جهاں تک مجھے سمجھ لگی هے کچھ اس طرح هے که
میسر زیادھ هے
لیکن کھانے کی کچھ شرائط هیں نظام قدرت میں
انگریزی میں کلوری یا کیلری کہتے هیں
ناں جی جس چیز کو
ان کی مقدار پر بندے کی حیات کی لمبائی هے
یعنی که اگر ایک بندے کو روزانه اس کی گئی مشقت کی عوض میں دو هزار کلوری کی اجازت هے یا کہـ لیں که دوهزار کلوری کا نظام ہضم دیا گیا هے تو اس کو سال میں
سات لاکھ تیس هزار کلوری سے صحت نصیب هو گی

چار کروڑ اٹھتیس لاکھ کلوری سے ساٹھ سال زندھ ره سکے گا
لیکن اگر یهی بندھ اپنی مشقت سے ڈیرھ گنا کلوری لیتا ہے تو جی ؟؟
اس کو منع کرنے کے لیے نظام قدرت میں تنبیح اور سزا کا نظام هے
پہلا انتباھ هوتا ہے
کھٹے ڈکار
پھر گیس
پھر بلڈ پریشر
اسی طرح که
اگر بندے کو سمجھ هی ناں هو یا سمجھ کے باوجود
باز هی ناں آئے تو؟؟
هارٹ اٹیک
ختم شدھ
رزق ختم

لیکن سر جی قدرت
کنجوس نهیں هے
اس میں جس طرح رزق کی فراوانی هے
اسی طرح
کلوری کی مقدار بڑحانے کا بھی طریقه هے
یاکہـ لیں که
کلوری بڑھانے کی قیمت هے
باٹر سسٹم
کچھ دو کچھ لو
جی
کلوری بڑھانے کی قیمت هے
مشقت
چاهے کام ميں کر لو
یا اکھاڑے میں
یا پھر کسی
ایکسرسائیز کلب میں
مزے کے کھانے کھانا چاهتے هو تو مشقت کرنی هی پڑے گی
دو گھنٹے کی بے تحاشا ورزش
بندے کو پچاس سال تک
کلوری کے شمار مقدار سے بے نیاز کردیتی هے
اگر کبھی کسی نے روزانه دو گھنٹے ورزش کرنے والے کو اوپر دی گئی پابندیوں میں مبتلا دیکھا ہے تو مجھے بھی بتائے
هاں هو سکتا هے که کسی اور جرم کی سزا میں کسی اور پابندی ميں مبتلا هو
اج کا موضوع رزق کا ہے
هوتا یه ہے که ورزش کے باوجود بھی کچھ
اوپر نیچے کا امکان هو تا ہے اس لیے
ایمان والوں پر ان کے رزق دینے والے الله کی طرف سے روزے فرض کیے گئے هیں که
اس ایک مہینے ميں باقی کی کلوری کی ایڈجسٹمنٹ کر لو
سحری کھاؤ
سارا دن مشقت کر کے جسم ميں موجود چربی کی شکل میں موجود کلوریز کو جلا کر ختم کرو
شام کو معده چھوٹا چھوٹا سا لگے گا افطاری کے وقت
تو جی معدے کو تنگ ناں کرو
جتنا ڈلے اتنا هی ڈالو
پھر دانت صاف کرو سادا پانی پیو
ایک مہینه
اور پھر
پيٹ کچھ کم هوجائے گا
جسم هلکا سا لگنے لگے کا
ایمان والوں کو
فکر کرنے والوں کو
سمجھ رکھنے والوں کو
صبر کرنے والوں کو
هاں لیکن ایک
اکثریت سمجھ نهیں رکھتی

7 تبصرے:

fikrepakistan کہا...

خاور بھائی بہت معقول بات کی ہے آپ نے۔

گمنام کہا...

بہت عمدہ بات،
جزاک اللہ خیر،

مگر اکثریت سمجھ نہیں رکھتی!
:(

Abdullah

Shaper کہا...

خاور بہت عمدہ اور سادہ طریفے سے آپ نے بہت اچھی بات کہی ہے

بلاامتیاز کہا...

خوب است

جعفر کہا...

حق بات ہے

ایم اے راجپوت کہا...

بہت عمدہ تحریر
جزاکم اللہ خیرا

bdtmz کہا...

دہ ہزار کیلوریز تمام پر لاگو نہیں ہوتی۔ یہ صرف پیسنٹھ کلو وزنی بندے کو وزن مینٹین کرنے کے لئے ضروری توانائی کی مقدار ہے۔
ہر بندے کی ضرورت اس کے وزن ضرب ایک اعشاریہ تین ضرب چوپبیس گھنٹے ہوتی ہے۔
دو ہزار کیلوریز کے نظام کا تعلق نظام انہضام سے نہیں ہے۔ یہ جسم کے ضروری پراسیس کے لئے توانائی کی مقدار ہے۔

Popular Posts