اتوار، 2 اکتوبر، 2005

بموں كى ماں

جناب بش صاحب كو صدر بننے سے پەلے يه بهى پته نەيں تها كه پاكستان كا حكمران كون ەے ـ خاندانى دولت ادمى كو كهان سے كهاں پهنچاديتى هے ـ جارج بش جنهيں تاريخ كا سرسرىسا بهى علم نهيں اج امريكه كے صدر هيں ـ يه صاحب اس قوم كو مٹانے نكلے هيں جسے اس وقت ختم نهيں كيا جا سكا تها جب يه صرف تين سو تيره كے هندسے تكـ محدود تهى ـ صاحب اس قوم كو خوراكـ كا لالچ دينے كى كوشش كر رهے هيں جن كے اقا صلى الله عليه وسلم پيٹ پر پتهر بانده كر خندقيں كهوداكرتے تهے ـ ان لوگوں كو ؛بمبوں كى ماں ؛ كے ڈراوے دے رهے ەيں شەيد كى ذندگى جنكا ايمان ەے ـ
يه قوموں كو ازاد كروانے نكلے هيں حالنكه اس بەتر كام تو يه هے كه اپنے ملكـ ميں موجود ان لاكهوں بچوں كو باپ ڈهونڈ كر ديں جو اپنے باپ كے نام سے بهى لاعلم ەيں ـ

3 تبصرے:

iabhopal کہا...

فرعون ۔ قیصر ۔ کسری ۔ نمرود سب کو یہی ذعم تھا ۔

WiseSabre کہا...

لکتا ہے امریک 313 سے مقابلہ کرنہ چاھتا ہے اس لیے ہمیں 313 پر لے کر آرہا ہے

WiseSabre کہا...

جناب عرض کیا ہے کہ رمضان مبارک ہو۔

میں نے سوچا خود چل کر آپ کو مبارک دے دوں۔آپکا تو شاید آج روزا ہے؟

Popular Posts