جمعرات, فروری 19, 2015

ننگے

ہم لوگ ، تہمند ( لکدی) باندھنے والے لوگ تھے ، ہاں ہاں وہی تہمند جو حج عمرے میں احرام میں باندہتے ہیں ،۔
جوان لڑکے تہمند کے " لڑ " لمبے کر کے باندہتے تھے ، جس سے گھٹنے ننگے ہو جاتے تھے ۔ بندہ عجیب لچا سا لگتا تھا ،
 اس لئے
بڑے بزرگ لوگوں کو یہ کہتے سنا ، اور بہت دفعہ سنا ۔
 اوئے منڈیا ! گٹے کج !!۔

سعودی ریال ،مودودی کے افکار اور جرنل ضیاع کا نظام مصطفے !!۔
 لڑکوں کے لباس   مہذب شلوار قیمض ہوئے ! ۔  پھر ہم نے سنا اور بار بار سنا ۔
اوئے منڈیا گٹے ننگے کر ،اوئے گٹے ننگے !!!۔

ہمارے دیکھتے ہیں دیکھے ہر چیز تبدیل ہو گئی ، امن ، تحفظ ، کمائی میں برکت اور دلوں میں محبت ، کی جگہ لڑائی ، خوف کرنسی کی ہوس کدورتیں عام ہوئیں ۔
سعودی اور مودودی نے گٹھنے کیا ننگے کروائے ، ہمارے معاشرے کو ہی ننگا کر کے رکھ دیا ہوا ہے ، اور ابھی یہ مشن مکمل نہیں ہوا ہے ، مشن جاری ہے ،بلکہ جاری اور ساری ہے ۔

1 تبصرہ:

sandal baria کہا...

What a change in values.very very well written

Popular Posts