جمعرات، 7 جون، 2012

رخِ خورشید کا تل

رخسار یار پر خال کی باتیں
که
خال یار کی قسمت کی باتیں
اردو کی رومانی شاعری
میں بہت چرچا هے جی
لیکن گزرے کل کی بات هے که جاپان میں صبح کے ساڑھے سات بجے سے لے کر دوپہر دو بجے تک
خورشید کے چہرے پر تل سابن گیا تھا
همارے نظام شمسی کے سیارے زهرہ کے زمین اور سورج کے درمیاں سے گزرنے پر
همارے علاقے میں تو مطلع ابر الود تھا
که غریب کے ارمانوں کی طرح اسمان پر بھی بادل چھائے تھے
لیکن جاپان میں بہت سے علاقوں ميں سورج کے چہرے پر بنے اس تل کو ایک طرف سے دوسری طرف پھسلتے هزاروں هی لوگوں نے دیکھا ہے
جب جاپان کے اسمان پر یه
موجود خورشید کے خال پر زہرہ کا تل پھسلتا هو اچل رها تھا
بی بی سی کے اردو اخبار ميں اس کے متعلق صیغه ماضی  میں لکھا جاچکاتھا

ایک تبصرہ شائع کریں

Popular Posts