جمعرات, اپریل 14, 2011

میاگی کا حال دوسری قسط

بات اس طرح شروع ہوئی تھی کہ اب جب کہ خاور کے پاس بھی کائی تائی کا پرمٹ ہے تو کیوں ناں تسونامی میں غرق ہونے والی گاڑیوں کو خریدا جائے جو کہ صرف میاگی کین کی حد تک ایک لاکھ جھیالیس ہزار کی تعداد میں خراب ہو گئیں ہیں جب میں نے اپنے بائر سے بات کی تو اس نے کہا کہ تابکاری والی گاڑیوں کا سکریپ تو وہ خریدے گا ہی نہیں اس لیے ہماری لست سے اباراکی کے ساحلی علاقے اور فوکوشیما خارج کردیا گیا یہ تھی وجہ منافقین کی تقلید میں فوکوشیما سے کترا کر گزر جانے کی فوکو شیما نیشی کے ایٹر سے نکل کر پاس ہی سیون الیون کے سامنے ایک ٹرانپورٹ کمپنی کا دفتر تھا ان سے ملنے گئے ان کے چار ٹرک پانی میں خراب ہوئے تھے ان سے چار ٹرکوں کا سودا طے کرکے میاگی کی طرف منہ کیا سیندائی اسٹیشن کے پاس میزو بوچی صاھب کے ساتھ لنچ کیا یہ میزو بوچی صاحب ردی کا کام کرتے تھے لیکن ان کی فیکٹری کا یہ حال ہو گیا ہے سب کچھ غق ہو گیا ہے اور میزو بوچی کوئی کوئی اجنبی نہیں ہے دوست ہے صرف خبروں میں سنی ہوئی شخصیت نہیں ہمارے ساتھ زندگی کزارتا جیتا جاگتا شخص ہے جس کا سب کچھ غرق آب ہو گیا ہے یہاں سے ہم سمندر کے ساتھ ساتھ چلتے جنوب کی طرف سفر کرتے ہیں ، ہر طرف تباہی کا منظر ہے میلون تک جڑوں سے اکھڑے درخت بکھرے پڑے ہیں کھیتوں میں سمندر کا بانی واہس جاتے ہوئے ریت اور نمک چھوڑ گیا ہے اس زمین کو اباد کرتے کتنے سال لگیں گے؟ جو مکان کھڑے رہ گئے ہیں ان پر بانی کا نشان لگا ہوا ہے کہ کس بلندی تک جا کر پانی واپس پلٹا تھا شام کو سیندائی اسٹیشن کے سامنے واقع ہوٹل ویسٹ ان ہوٹل میں پہنچے یہاں رات کزارنی تھی جو کمرے ہمیں ملے وہ پینتسویں منزل پر تھے اس ہوٹل کا ایک کمرے کا رات کا کرایہ بتا کر میں اپنی امارت کا رعب نہیں ڈالوں گا کہ کرایہ کانائی ساں نے دیا تھا نہا کر رات کے کھانے کے لئے نکلے پاس ہی ایک گائے کی زبان کے تکوں کا ریسٹورینٹ تھا اس مین چلے گئے اس ریسٹورینٹ کے عملے کا کام کرنے کا انداز دیکھ کر دل خوش ہو گیا دب بھر مصیبت زدہ لوگ اور ماحول دیکھ کر دل بجھ سا گیا تھا کہ اس ریسٹورینٹ میں کام کرنے والے سب لوگ ایسے کام کررہے تھے جیسے کام نان ہو ان کا مشغلہ ہو سبھی لوگ خوش دلی سے کام کررہے تھے اس کے بعد جو سیندایی جائے اور کبکی چو نان جائے وہ کوئی خاتون یا پھر وچکارلا ہی ہو سکتا ہے سبھی دوستوں نے شراب پی خاور نے بھی کوکے کولے کے تین گلاس ڈکارے اور جینی چائے اولون چا پی شراب کانے کا ماحول تھا کہ اردو کی شاعری تھی ساقی تھا جام تھا خم تھا خرابات تھی کھلی زلف تھی ، عشق کی گستاخیوں کو بھی اجازت تھی اکسٹرا اخراجات اٹھانے والوں کے لیے وصل کی وادیوں میں شجر ممنوعہ بھی تھا لیکن جی شکاری کرکے کھاتا ہے قصائی کی دوکان سے نہیں باہر نکل کر کانائی سان نے ساتھ ائے تین دوستوں کو چند لاکھ کی رقم دی کہ کھیل لو!!!!۰ میں اور خاور واہس جارہے ہیں ٹیکسی لے کر واپس پہنچے ہی تھے کہ وہ تین بھی واپس آگئے تم کو کیا ہوا ہے ؟؟ جب پوچھا تو سوزوکی نے بتایا کہ جی یہ یامادا سان اڑ گیا تھا کہ میں نہیں جاوں گا کہیں بھی کیوں کہ میری ایک بیوی بھی ہے اپنے اہنے کمرے میں جاکر ابھی سوئے ہی تھے کہ زمین ہلنے لگی جمعرات سات اپریل والے زلزلے کی بات کررہا ہوں پینتسوین منزل پر حال کچھ ایسا تھا کہ جیسے بانس زمین پر رکھ کر ہلائیں تو زمین کے پاس سے کم ہلتا ہے اور اوپر سے زیادہ کمرے میں اوازوں کا طوفان تھا ٹیلی فون کی کھنٹی الارم اور پتہ نہیں کیا کیا میں کھڑکی کے پاس جا کر دیوار کا سہارالے کر کھڑا ہو گیا کہ موت کا دن تو مقرر ہے چلو تلاش کرنے والوں کو لاش جلدی مل جائے ہاتھ سے دیوار کا سہارا لیے میں مسلسل پکار رہا تھا یا اللہ خیر یا اللہ خیر

4 تبصرے:

جاوید گوندل ۔ بآرسیلونا ، اسپین کہا...

۔"دیوار کا سہارا لیے میں مسلسل پکار رہا تھا یا اللہ خیر یا اللہ خیر"۔

ویسے ایک فائدہ ہوا "شکاری" کو اللہ بروقت یاد آگیا۔ :)

خاور بھائی۔

تابکاری نظر آئے نہ آئے۔ اس سے گریز کرنا چاہئیے۔ ہمیں آپ کی صحت کی فکر ہے۔ تابکار شدہ علاقے سے دور رہنا اور وہاں کا تابکار شدہ اسکریپ نہ خریدنا بزدلی نہیں عقل مندی ہے۔ خدا نہ کرے آپ کو یا اسکریپ کی وساطت سے کسی دوسرے کو کوئی مسئلہ ہو۔ موت کا ایک دن مقرر ہے۔ مر گئے۔ جان چھوٹ گئی۔ مگر ایڑیاں رگڑ کر مرنا۔ خود تکلیف بھگتنا اور عزیزوں کو بھی پریشان رکھنا ۔ اس سے بچنے کی خدا سے دعا مانگنی چاہئیے۔

اگر کوئی چارہ نہ رہے اور کسی کی مدد کرتے ہوئے۔ اپنی قوم یا وطن یا جہاں آپ رہتے ہیں وہاں مصیبت میں پھنسے لوگوں کی مدد کرنے کے بدلے خدا نہ کرے اسطرح کی کوئی صورت پیش آجائے تو بھی انسان کو صبر آجاتا ہے مگر بغیر کسی خاص وجہ کہ تابکاری وغیرہ سے آلودہ جگہوں اور خوراک اور سامان سے گریز کرنا چاہئیے۔ کیونکہ اسکا علاج نہائت صبر آزماء ہوتا ہے۔

البتہ جب یہ اعلان مصدقہ طور پہ ہوجائے کہ کوئی خطرہ نہیں تو پھر سے ایسے علاقے سے اسکریپ ضرور خریدیں۔

اللہ سب کو اپنی حفظ و امان میں رکھے۔

یاسرخوامخواہ جاپانی کہا...

دیکھا نا۔۔۔۔۔شکاری کو سسچی مچی اللہ میاں کو یاد کرنے کا مزا آگیا۔
میں اشی نو ماکی راتوں رات ٹرک لیکر گیا اور سامان اتار کے واپس آگیا۔جو ٹریک سوٹ اور جوتے پہن کر گیا تھا۔گھر والی نےجلا دیئے اور دوبارہ مجھے ادھر جانے نہیں دیا۔
مزے کی بات کہ سامان سارا جاپانیوں نے جمع کیا تھا اور ٹرک کا بندوبست بھی جاپانیوں کیا تھا۔۔۔لیکن ڈرائیور کوئی جانے کو تیار نہ ہوا۔

یاسر خوامخواہ جاپانی کہا...

اوپر کسی ۔۔۔۔۔نے میرے نام سے تبصرہ کیا ہے۔
ہو سکے تو ہٹا دیں

عنیقہ ناز کہا...

آپ کا شکریہ کہ اپنے ملک کے حالات لکھتے ہیں۔

Popular Posts