سوموار، 25 ستمبر، 2006

مہر افشاں سعید

یه ایک ای میل بهیجی تهی مجهے مہر افشاں بہن نے ـ مہر افشاں صاحبه سعودی عرب میں رہائشی ہیں ـ
اردو میں بلاگ لکهاری اور قاری تقریباً سارے هی انہیں جانتے هیں ـ
ان کے تبصرے رومن اردو میں لکهے هوتے ہیں ـ
مہر افشاں بہن کي رومن اردو میل کو حروف تہجی میں لکھ رها هوںـ
لکھتی ہیں
سب لوگوں نے پاکستان کے ساتھ کیا کیا ـ
قائدآعظم
اسلامی جمہوریه پاکستان

ایوب خان(ان صاحب کو خاور عیوب خان لکهتا ہو عیوب یعنی عیب کی جمع)ـ
ترقی پذیر پاکستان ـ آپ اس میں آپنے زرخیز ذهن سے تبدیلی لانا چاهیں تو لا سکتے هیں ـ
ذولفقار علی بھٹو
عوامی جمہوریه پاکستان ـ
یحیی خاں
آدھا جمہوریه پاکستان ـ
ضیاءالحق
کلاشنکوف جمہوریه پاکستان
غلام اسحق خان
آئی ایس آئی جمہوریه پاکستان
معین قریشی
ٹیکس جمہوریه پاکستان
بے نظیر بھٹو
زر داری جمہوریه پاکستان (زر داری کے معنے ذہن میں رہیں)ـ
نواز شریف
آبّا جی اینڈ سنز جمہوریه پاکستان
جرنل پرویز مشرف
پاکستان (پرائیویٹ)لیمٹیڈ
آپ چاہیں تو فوجی جمہوریه پاکستان بهی لکھ سکتے هیں ـ
ایمیگریشن فرام پاکستان

اتوار، 24 ستمبر، 2006

گهر کی شیر بلّی

پنجابی کے مشہور شاعر استاد دامن عوامی شعر تهے ـ
عوامی اس لئے که ان کے اشعار عوام کی زبان په چڑه جایا کرتے تهےـ
استاد دامن نے بہت عرصه پہلے لکها تها
اور شائد پاک فوج کے لئے هی لکها تها

ايەـ آپنياں دے ويرى نيں

دم دوسرياں دا بهردے نيں

ايەـ مت كسے دى ليندے نئيں

جو من وچ آوے كردے نيں

كيوں عقلوں باهر نه آواں ميں

ەن ربّا كتهے جاواں ميں

ان اشعار کی ذہن میں رکهتے هوئے ذرا مشرف صاحب کا وه بیان پڑهیں جس میں انہوں ني آرمنٹیج کي دهمکی کا بتایا هے ـ
رچرڈ آرمٹیج نے جو الفاظ استعمال کیے ہیں آگر آپنوں میں سے کوئي ایسا لہجه اختیار کرے تو؟؟

رچرڈ آرمٹیج اگرشیخ مجیب الرحمان یا اکبر بگٹی یا بهٹو یا نواز شریف کی جگہ ہوتے تو پاک فوج کی طاقت سے بنے فرعون کا رویه کیا ہوتا ؟

رچرڈ آرمٹیج اس دھمکی کے بعد بھی امریکی نائب وزیرِ خارجہ کے طور پر کئی ماہ مشرف صاحب کی مہمان نوازی کا لطف اٹھاتے رہے۔
پروگرام کے میزبان جب پوچها که رچرڈ آرمٹیج کی دهمکي سن کر آپ کو غصّه تو آیا ہو گا ؟
تو بهی مشرف صاحب کو اتنی جرأت نه هوئی که آپنے غصّے کا اظہار کرتے ـ
منه بسورتے بچے کي طرح کہنے لکے
رچرڈ آرمٹیج صاحب کا لہجه بڑا تلخ تها ـ

چهڈو جی مٹي پاؤ سیاست تے
استاد دامن کی شاعری کا ایک اور پیرا ـ

گارا ڈهو كے تے كردا اے شكر كوئى

تے كوئی حكم چلائے ەنكار دے نال
مت بندياں دى كيوں مارى گئى اے

اوه تے سبناں نوں ملدا اے پيار دے نال

كردا خُلق ەے راج جەاں اُتے

حُكم چلے نه سدا تلوار دے نال

ەتهوں چهڈيا . ربّ دا جنەاں دامن

اوه نمرود مٹ گئے .پەلے وار دے نال

جمعرات، 21 ستمبر، 2006

یاد دہانی

اردو میں لکهنے والے خواتین و حضرات جو که انفرادی طور پر لکهتے هیں ـ
آپنے بلاگ یا سائیٹ کي فیڈ شامل کروانے کے لئیے اپني سائیٹ کا فیڈ یو آر ایل مجهے ای میل کریں ـ
میں نے آپنی سی کوشش کی هے که اردو سیارّه میں شامل سارے ممبران اور اس کے علاوه کو بهی شامل کروں لیکن اگر پهر بهي اگر کوئی بلاگر هو تو میں آپ کی میل کا انتظار کر رها هوں ـ
میں اکیلا آدمی ہوں اور اس ملک کی زبان اور ماحول میں اجنبی بهی اس لئیے مجهے اس ماحول میں گهٹن سی محسوس هوتی هے اور بہت سے معاملات نظر میں آنے سے ره جاتے ہیں ـ
کسی بهی قسم کا مشوره هو یا صحت مند تنقید آپ مجهے بغیر کسی ہچکچاہٹ کے میل کر سکتے هیں ـ
آپ آپنی بات انگریزي جاپانی اردو یا پنجابی میں لکھ سکتے هیں مگر میں اس کاجواب صرف اردو میں هی دوں گا ـ
ای میل ایڈریس هے
ellha@yahoo.com
یہاں تین یوآر ایل ایڈریس کاپی کر رها هوں ـ
اگر کسی ایک میں فنّی خرابی هو بهی جائے تو بهی کوئ ناں کوئی کهل هی جائے گا
http://khawar.riereta.net/urdu/

http://www.lesdiplos.com/urdu/

http://www.lesdiplos.com/test/

نوٹ = یه پوسٹ بار بار ڈلیٹ کر کے پبلیش کی جاتی رہے گی تاکه نئے پڑهنے والے بهي آگاه هو سکیں ـ

سوموار، 18 ستمبر، 2006

نرالی باتیں

جرنل مشرف صاحب نے یورپی یونین کے صدر دفتر میں تقریر کي ہے
جرنل صاحب بڑے مخولیه سے آدمي ہیں ـ
آپنے آپنے ملکوں میں عوامي حمایت سے لیڈر بن کر یورپي یونین کے دفتر میں آپنے آپنے ملک کے عوامی نمائندوں کو
عوامی حمایت کا برا هونا بتا رہے هیں
یه یورپی لوگ ان کی باتوں پر دل هي دل میں مسکراتے تو ہوں گے ـ
که
کیا گدها آدمی ہے که طالبان کا خطرناک هونا ان کی عوامي حمایت کا ہونا بتا رها هے ـ
مگر پاکستان میں عوامی حمایت کا هونا واقعی ایک جرم هے ـ
اور پاکستان میں اس جرم کي سزا موت یا جلاوطنی ہے
مجیب الرحمن کا جرم بهي عوامی حمایت تها ـ
بهٹو کا جرم بهي عوامی حمایت تها
نواز شریف کا جرم بهی عوامی حمایت تها
ڈاکٹر قدیر خان کا جرم بهی عوامي حمایت هے
بکٹی بهی بلوچوں میں مقبول تها
جاود هاشمی بهی آپنے حلقے سے انتخاب جیت کرآیاتها

ذیل میں جرنل صاحبکي تقریر کا متن میرے لفظوں ميں
یا
یه کہـ لیں
مجهے یه تقریر اس طرح سنائی دي ـ

اسلامی جميوریه پاکستان پر قابض گروه کے سرغنه پرویز مشرف نے کہا ہے کہ افغانستان میں (پالتو لوگوں کے)امن اور سالمیت کے لیئے فی الوقت طالبان القاعدہ سے زیادہ خطرناک ہیں۔

برسلس میں یورپی پارلیمان کے اراکین کو خطاب کرتے ہوئے مشرف نے کہا کہ طالبان کو عوامی حمایت حاصل ہے جو قومی سطح پر(پالتو لوگوں کے ساتھ) ٹکراؤ کا سبب بن سکتا ہے۔

اس تنقید کے جواب میں جس میں پرویز مشرف پر یہ الزام لگایا گیاہے کہ وہ سرحد پر انتہا پسندی کو قابو کرنے کے مناسب اقدام کرنےمیں ناکام رہے ہیں، انہوں نے کہا کہ ان کے گروه نے سرحد پر پچاس ہزار بندے تعینات کر رکھے ہیں اور اب تک همارے گروه کے چار سو بندے مارے جا چکے ہیں۔

پرویز مشرف نے مغرب پردہشت گردی کو بڑھاوا دینے کا الزام لگاتے ہوئے کہاکہ تم لوگوں نے سابق سویت یونین کے خلاف جنگ کرنے کے لیئے ہزاروں مجاہدین کا استعمال کیا اور اب ایک دہائی کے بعد ہم لوگوں (پالتو)کو ان مجاہدین کا سامنا ہے

انہوں نے کہا کہ پاکستان میں ان کا (فوجی)گروه عوامی لوگوں کےساتھ نرم روی رکھنے والا ملک نہیں ہے جیسا کہ اکثر مغربی ممالک الزام لگاتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ هم (فوجي لوگ)عوام میں جڑیں رکهنےوالے لوگوں کے خلاف ہے۔ ۔

مشرف نے کہا کہ طالبان کوافغانستان کے عوام میں کافی حمایت حاصل ہے جس کی قیادت ملا عمر کے ہاتھ میں ہے۔انہوں نے کہا کہ ملا عمر نے کبھی پاکستان کا دورہ نہیں کیا۔ مشرف نے زور دے کر کہا کہ طالبان کو ختم کرنے کا واحد راستہ طاقت کا استعمال ہی ہے۔

مشرف کا یہ یورپی یونین کے صدر دفتر کایہ پہلا دورہ تھا ۔

جمعہ، 15 ستمبر، 2006

کمانڈو

جناب جرنل صاحب یورپ کے دورے پر تهے ـ
Musharefineuکلوز آپ کے لئے کلک کریں
بس ترنگ میں آ گئے اور فوٹو گرافر نے فوٹو بنا لي ـ
Musharefineu1کلوز آپ کے لئے کلک کریں
میں ان تصویروں کو ایڈیٹ کر کے انٹر نیٹ پر چڑها تو رها هوں مگر یقین کریں اندر سے میں یرکا هوا هوں ـ
Musharefineu2کلوز آپ کے لئے کلک کریں
جب تک جرنل صاحب پاکستان پر قابض هیں میں پاکستان نہیں جاسکتا ـ
میں تو ہوں بهي بلکل هي عام سا پاکستاني ـ
میری تو مدد بهی کسی نے نہیں کرنی ـ

بدھ، 13 ستمبر، 2006

پردهان دی گل

لو جی اس کو کہتے هیں
پروپوگینڈا
بی بی سی نے بتایا هے که پاکستاني شہري امیر ہو گئے ہیں ـ
سانوں پته ای نئیں ساجےـ
که پاکستان وچ لہراں تے پهیراں ہو گئیاں نےـ
سي این این اور فوکس نیوز کو پروپیگینڈا سمجھ کر هم بی بی سی پر اعتماد کئے هوئے تهے ـ
هر روز دن میں کئی دفعه بی بی سی کهولتے هیں که تازه اور سچی خبریں ملیں گي ـ
اس طرح کے آرٹیکل لکھ کر هم جیسوں کا اعتماد مجروح کر رہے ہیں که هم ان کي دوسری باتوں پر بهی اعتبار نه کریں ـ
پچهلے سالوں سے جو زبان پاکستان پر قابض لوگ بول رہے هیں ان کی ساری گمراه کن باتوں کو يهاں اکهٹا کردیا گیا هے ـ
اس جهوٹ کی ہنڈیا کو تهوڑا سا حقائق کا تڑکا بهی لگایا گیا هے که کہیں لوگ بدک هي نه جائیں یعنی جہاں لکها گیا
هے که زرمبادله کے ذخائر میں اضافے کي ایک وجه تارکین وطن کی بهیجی هوئی رقوم بهی هیں ـ

شوکت عزیز صاحب نے موبائل فونوں کی بڑهتی هوئی تعداد کو ملکی ترقی بتایا تها
اور کراچی والے نعمان نے اس پر پوسٹ لکهی تهی که یه فون بڑه کیسے رہے هیں ـ

کسی صاحب نے داتا صاحب کے لنگر کی فراوانی کو بهی ملک کی خوش حالی کی دلیل بنایا تهاـ

پاکستان کی امارت اور غربت ایک چیز ہے که هم اپنی جلدپر محسوس کر رهے هیں ـ
اس بات پر گمراه کرنا ایک ایسی هي ناکام کوشش هے جیسی که عوام کو مولوی کے خلاف کرنے کي هے ـ
بنگالیوں اور سیاستدانوں کے خلاف کرنے کي کوشش کامیاب رهی تهي مگر
غربت اور مولوی کی جڑیں پاکستان کی زمین میں بہت گہری ہیں ـ
ان کے متعلق پروپوگینڈا کامیاب نہیں ہو گا ـ
ایسی باتوں کے متعلق پنجابی میں کہتے هیں
تتے توّے تے کی سی کر کے مکر جانا ـ


پڑهے لکهے بڑے بزرگوں سے سنی هوئی برکات انگلشه کا نیا ایڈیشن هے یه ارٹیکل برکات امریکه ـ
فوجی حکمرانوں نے خواب دیکها کر عوام کو گمراه کیا تها ـ
نو گیاره والے معاملے میں شامل ہو کر ـ
اب بی بی سی بتا رہي هے که وه سارے خواب حقیقت بن چکے هیں ـ
اور آگر آپ کو یه حقیقت نظر نہیں آ رهی تو آپ عقل کے اندهے هیں ـ
نوٹوں کي گڈیاں اور گاڑیاں پلازے یه ساری برکات جب کمہاروں تک پہنچیں گي تو هم مانیں گے که عام آدمی کا معیار ذندگی بلند ہوا هے ـ

ہفتہ، 9 ستمبر، 2006

چهوٹا منه بڑي بات

سنده میں لوگ کہتے هیں که
ہمارے دریاؤں کے پانی سے بجلی تو پنجاب نکال لیتا هے اور همیں پهوکا پانی ملتا هے ـ
اور میں نے یه بات سنی تهی پنجاب کے ایک گاؤں میں ایک آدمي جس کی زمینیں نندی پور پارو اسٹیشن سے نیچے تهیں ـ
جب اس نے پهوکے پانی کی ٹرم استعمال کي تو میرا ہاسا نکل گیا تها ـ
میں سمجھ رہا تها که یه بنده مذاق کر رها هے
مگر شیدے مستری نے مجهے بتایا که یه بنده مذاق نہیں کر رها بلكه اس کی ذهني اهلیت هي اتنی هے
وجه کچھ بهی ہو یه ایک حقیقت هے که سنده اور بلوچستان میں احساس محرومي پایا جاتا هے ـ
اور ہر خرابی کا الزام پنجاب کے سر تهوپ دیا جاتا هے ـ
پنجاب اور سرحد میں جو بات حکومت کی نااهلی یا ملکی حالات کی خرابی سمجهی جاتی هے وهی بات سنده اور بلوچستان میں پنجاب کی ذیادتی کیوں بن جاتی هے ؟؟
کہتے ہیں که کبوتر جب بلّی کو دیکهتا هے تو انکهیں بند کر لیتا هے که بلی غائب هو گئی مگر
اب کبوتر کی طرح انکهیں بند کرنے سے بلّی غائب نہیں ہو گی
اور کبوتر کو کها بهی جائے گی
ـ
میرے خیال میں اگر پنجاب پنجاب نه رهے اور سنده سنده نه رهے بلکه سارا پاکستان بن جائے جسطرح که
سنّی سنی نه رهے اور شیعه شیعه نه رهے بلکه مسلمان بن جائیں تو کیسا هے ـ
یه ایک قسم کی انتظامی تقسیم هو که جس میں صوبوں کا تصوّر هي ختم هو جائے ـ
جاپان اور فرانس میں اس انتظامی تقسیم کے یونٹ کو پرفیکچر(جاپانی میں کین) کہتے هیں ـ
فرانس کے پچانوے پرفیکچر اور سمندری علاقے هیں ـ
جاپان کے سنتالیس کین دو تهو اور ایک فو هے ـ
مزے دار بات تو یه هے که پاکستان میں اسطرح کا سسٹم پہلے سے هي هے
یعنی ڈویژن یا کمشنری ـ
اگر پاکستان میں صوبوں کا تصّور ختم کر کے هر ڈویژن کو صوبوں کي طرح کے انتظامات پر استوار کردیا جائے تو پهر سندهی بلوچي اور پنجابی تعصّب کا آہسته آہسته وجود هي ختم هو جائے گا ـ
اور ان ڈویژنوں کي ترتیب بهی اس طرح هونی چاهئے که کوئی بهی شر پسند شخص کل کو یه نه کہے که یه والی پانچ ڈویژن ماضی میں سنده یا پنجاب هوتي تهیں ـ
که پاکستان صرف پاکستان ہو نه که کچھ اور ـ
مگر اسطرح کی تقسیم پاکستان کو مضبوط اور پائدار بناتی هے ـ
پاکستان سے تعصّب کا خاتمه کرتی هے ـ
بهائیوں کے اختلاف کو ختم کرتی ہے ـ
مگر کچھ لوگوں کا مفاد هي انارکی تعصّب اور تفرقے میں هے ـ
لڑاؤ اور حکومت کرو کے ماٹو والے لوگ
میري یه بات کوئي حرف آخر نہیں هے
یه ایک کمہار کی ذہني اپروچ هے
انتظامی تقسیم کا کوئی اور فارمولا بهی هو سکتا هے
مگر یه تقسیم ضروری هے
میں ایک انتہائی عام سا آدمی ہوں جس کو صرف فقره بنانا آتا هے
ورنه میرے احساسات اور باتیں پاکستان کے غریب لوگوں والي هی ہیں جن کے گهروں میں ایک سائیکل کي خریداری کو لئے کتنے کتنے دن مشورے هوتے هیں ـ
جن کے گهروں میں مرغی تب کهائی جاتی هے جب کوئی بنده بیمار هو جائے یا گهر کی مرغی بیمار هو جائےـ

قاری کی بات

میری بات


یه ایک تبصره تها رومن اردو میں میرے بلاگ کی ایک پوسٹ پر میں نے اس کو اسی طرح اردو میں نقل کردیا هے ـ
یه صاحب نامعلوم صاحب هیں ـ میرے خیال میں نامعلوم هونا کوئی معیوب بات نہیں اگر ان صاحب کي بات معیوب نہیں هے تو ـ
اب هر آدمی بلاگر تو نہیں هے ناں یا هر آدمي تبصره کرنے کے لئیے ایک آئی ڈي بناتا پهرے ـ
ایک نامعلوم کا تبصره آوازه خلق بهی هو سکتا هے ـ
لیکن اگر یه صاحب صرف آپنا نام لکھ دیتے تو مخاطب کرنے میں آسانی رہتی ـ
اس تبصرے میں مخاطب هیں جناب اجمل صاحب
ایک تو اجمل صاحب کے بلاگ پر کسی ایرے غیرے کو تبصره کرنے کی اجازت نہیں اور دوسرا اگر کوئی تبصره کرے بهی تو صرف اجمل صاحب کا پسندیده تبصره هی شائع هو سکتا هے ـ
اجمل صاحب کی عمر اور تجربه هم سے ذیاده هے هو سکتا هے که ان میں ان کی کوئی دانائی چهپی ہو ـ
نامعلوم صاحب کے خیالات ان کے خیالات هیں یه خاور کے خیالات نہیں ہیں ـ


نامعلوم کا تبصره




آپ سے پیشگی معذرت کے ساتھ .مسٹر اجمل کو یه جواب بهیجنا تھا . دو دن انتظار کے بعد آپ کے بلاگ پر لکھ رها هوں ، ان کی معروضات کا جواب ،یه کسی حد تک آپ کی پوسٹ کے بهی متعلق هے ـ
مسٹر اجمل کے لئیے ـ
کل سارا دن نیٹ کنکشن نه هونے کی وجه سے جواب نه لکھ سکا ـ آپ کی گفتگو سےایسا محسوس هو رها هے که سارے پاکستان میں تو هاهاکار مچی ہو لیکن پنجاب میں سکون کا دور دوره هے ـ
او بزرگو ـ جو حال دوسرے صوبوں کا هے وہی پنجاب کا بهی ہے لاقانونیت کا بازار تو وهاں بهی گرم ہے ـ
تو
اس حدیث کے مطابق تو آپ بهی ایسے هی لوگوں میں شامل هوئے جو غلط کو صحیع کرنے کی کوشش نہیں کر رہے کیونکه آپ کی خود غرضی آپ کو ایسا کرنے کي اجازت نہیں دیتی ـ
میری نماز مجهے یه سکهاتی هے که حق کو حق کہو آپنی ذاتی اغراض پر آپنی قوم (مسلمان)کی بهلائی کو مقدم رکهو کسی مسلمان کو کافر نه کہو ـ اصلاح اپنے گهر آپني اولاد سے بلکه آپنی ذات سے شروع کرو ـ لیکن آپ کی نماز آپ کو کیا سکهارهی ہےوه تو صاف نظر آرها ہے ـ
پنجاب کو مقدس گائے نه بنائیے که جس کے ٹکرے نہیں ہو سکتے ـ ملک کے ٹکرے کرنے سے بہتر ہے که صوبوں کے ٹکرے کر دئیے جائیں ـ خود پنجاب کے کتنے هی علاقے یه چاهتے ہیں کیون که ان کے نام پر لئیے پیسوں کا ذیاده حصّه راولپنڈی اسلام آباد اور لاہور پر خرچ ہو جاتا ہے ـ اور ان کے حصے مونگ پهلی کے دانوں کے سوا کچھ نہیں آتا ـ
پنجاب نه توڑا جائے یا مذید صوبے نه بنائے جائیں اس کے لیے آپ کے پاس کون سي قرآنی آیات یا حدیث هے ـ
بابا جی کوئی جواب نہیں بن پڑتا توقرآن و حدیث کا نام لے کر لوگوں کو بیوقوف بنانے لگتے ہو ـ
کراچی میں تو نوّے فیصد پولیس پنجابی ہے جو خود جرم میں برابر کی شریک ہے ـ
رہی سہی کثر رینجر پوری کر رہے ہیں ـ
بلوچستان کے لوگ کیوں نہیں پنجاب کو آنے دینا چاهتے
وه صاف صاف کہتے ہیں که ہم کراچی نہیں بنانا چاهتے
وہاں پنجاب سے اتنے لوگ لا لا کر بسادئیے گئیے ہیں که وہاں کے رہنے والے اقلیت میں تبدیل ہوتے جا رہے هیں ـ
اور یہی اب بلوچستان میں ہونے جا رها هے ـ
لیگ اتنے بهی بیوقوف نہیں ہیں جتنا آپ نے انہیں سمجھ رکها هے ـ
آخری بات آگر ارکان پارلیمنٹ لوٹ کهسوٹ کا بازار گرم کئے ہوئے ہیں تو ایسے نظام کو هي ختم کرنےکوشش هونا چاهئیے
اور اگر یه نہیں ہو سکتا توپهر اسی طرح ان کےاختیارات کا زور کم کیا جا سکتا هے ـ
حکیم سعید اور دوسرے علمائےدین کو مارنے میں سراسر ایجینسیوں کا هاتھ تها
اور ایجنسیوں میں کون بیٹهے ہیں یه بتانے کي ضرورت نہیں ـ
یه تو پورا پاکستان جانتا هے که کراچی سے کمایا هوا ریونیو کا ایک بہت بڑا حصه پنجاب چلا جاتا هے ـ
لیکن کل جنگ میں کراچی کے ناظم کا بیان پڑه کر حیران هوئے که شہری حکومت کا کنٹرول شہر کے صرف چونتیس فیصد پر ہے ـ
باقی شہر دیگر اداروں کے کنٹرول میں هے جو کراچی سے تعلق نہیں رکهتے جو محکمے شہری حکومت کے کنٹرول میں نہیں ہیں ان میں ٹریفک پولیس بجلی ٹیلی فون سوئی گیس اور ریلوے وغیره شامل هیں ـ
کراچی کو آج تک خود کوئی پاور پلانٹ لگانے کا حق حاصل نه تھا اور اسے بجلی منه مانکے داموں واپڈا سے خریدني پڑتي تهي ـ
کیا اتنی تفصیل کافي هے ؟؟

بدھ، 6 ستمبر، 2006

چھ ستمبر

چھ ستمبر ـ
هم آپنے بچپن سے یه دن دفاع پاکستان کے نام سے مناتے رہے ہیں ـ
اس معاملے میں چالیس سال پاک فوج اور ایجینسیوں نے پاگستاني قوم کو بیوقوف بنائے رکها ـ
خود جارحیت کر کے دوسروں کو جارح کہا ـ
اپریشن جبرالٹر کے نام سے حمله کیا اور جب دشمن نے اس کا جواب دیا تو اس کو دشمن کا حمله کہـ کر پاکستانی قوم کے گمراه کرتے رهے ـ
دنیا کی اور قومیں بهي هم پاکستانیوں کو چهوٹا اور بیوقوف سمجهتی ہیں مگر پاک فوج نے توپاکستانیوں کو نیچ اور بیوقوف سمجهنے کي حد ہی مکا دی هے ـ
ڈنکے کي چوٹ پر جهوٹ بولتے هیں ـ
خوابوں کي ہانڈی پکا کر اس کو اعدادشمار کا تڑکا لگاتے هیں ـ
قوم کو کهلا کر کہتے هیں
چڑه جا بچا سولی رام بهلی کرے گا ـ
فوج کے سرغنه کا لہجه پاکستانیوں کے لیے دهمکي آمیز هوتا هے ـ
پاکستانیوں کو قتل کرواتا هے ـ
پاکستان پر حملے کرتا هے ـ
پاکستان کو نقصان پہنچاتا ہے ـ
پاکستانیوںکی زمینیں چهین کر آپنے ٹولے میں بانٹتا هے ـ
اس کے باوجود آگر پاکستانی چپ ہیں تووه پاکستانیوں کو جانتا هے که یه واقعی بیوقوف هیں ـ
آج بهی چهـ ستمبر کو دفاع پاکستان کا دن سمجهنے والوں کی عقل پر افسوس اور دعا که اللّه ان کو عقل دے
اور
پاکستان کو فوج کے قبضے سے آزاد کروائے
آمین

سوموار، 4 ستمبر، 2006

ائر اینڈ سپیس شو

دو ہزار پانچ کے جون میں یہاں فرانس میں ہوا اور خلا کی مشینوں کی ایک نمائش ہوئی تهی ـ مجهے بهی اس کو دیکهنے کا اتفاق ہواـ
اس ائر اینڈ سپیس شو میں میں نے کچھ تصاویر بنائی تهیں ـ
اس نمائش میں شامل مشینوں کو دیکھ کر میرے خیالات لکھنے کا سوچتا رها مگر غم روزگار ـ ـ ـ ـ
Airand_spaceshow5
اس دوران اسرائیل نے لبنان پر حمله کر دیا اس چونتیس روزه لڑائی نے میرے کچھ خیالات کو بدل دیا ـ
مگر کہنے کو اب بهی بہت کچھ هے ـ
تکنیک یعنی ہنر میں اس کو بہت اہمیت دیتا ہوں اگرچه که پاکستان میں هنر کو حقیر جانا جاتا هے ـ
تکنیکی طور پر ایڈوانس اقوام ہی زرعی طور پر بهی ایڈوانس ہیں ـ
سائنس بتاتی ہے که
اگر ادمي کو کهانا نه ملے تو ایک مہینے میں مر جاتا ہے
اور
آگر پاني بهي بند ہو جائے تو پندره دن میں مر جاتا هے ـ
اور آگر
سانس بند کر دی جائے تو
پانچ منٹ میں آدمی مر جاتا هے ـ
مگر جس آدمی کے پاس نیا آئیڈیا نه ہو وه دونسلوں کے بعد مر جاتا هے ـ
جی ہاں دو نسلوں کے بعد مر جاتا هے ـ
درخت جڑ سوکهنے سے مرتے هیں
مگر
آدمی ایک ایسا درخت هے جڑ کے سوکهنے سے نہیں پهل کے سوکهنے سے مرتا هے ـ
چهڈو جی مٹی پاؤ ان باتاں پر
آؤ فوٹو دیکهتے ہیں ـ

Airand_spaceshow

یه ایک اسرائیلی کمپنی ہے جو امن قائم کرنے کے لئیے تباهی کے ہتهیار بناتي هے ـ
تکنیکی طور پر انتہائی ماهر لوہاروں کي کمپنی ہے ـ
ان کے اشتہار پر انگریزي میں لکها هے
Airand_spaceshow7

Airand_spaceshow9
کوئی بهی شوٹر کوئی بهی سنسر اور کہیں بهي پہنچ کر ڈیلیوري دے سکتے ہیں ـ
Airand_spaceshow11
Airand_spaceshow10


آگر آپ قیمت ادا کر سکتے هیں تو بهي آپ کو ڈلیوري مل جائے گی اور آپ مسلمان ہيں تو آگر آپ کے پاس پیسے نہیں بهی ہیں تو بهی یه اسلحه آپ کو ڈلیور کیا جاسکتا ہے ـ
جیسے پچهلے دنوں لبنان کو ڈلیور کیا گیا تھا ـ

Airand_spaceshow1

Airand_spaceshow6


جي ہاں یه جہاز هندوستاني ساخته ہیں ـ اور پاکستان میں هر هندوستاني چیز سے نفرت کاسبق دیا جاتا هے ـ
نفرت کرنے کا حق تو یه هے که ان سے بہتر چیز بناکر هندوستان کو نیچا دکهایا جائے ـ
ویسے تو جرنل مشرف بهی ہند ساخته هیں ـ دهلي کي پیدائش ہے ناں جي ان کي ـ
Airand_spaceshow2

یه فرانسیسی حکومت کے میزائل هیں جو که کسی قسم کي هنگامی صورتحال سے نپٹنے کے لئے لگائے گئے تهے ـ
Airand_spaceshow3

اور یه ہیں جی باوقار قوموں کے جهنڈے یعنی جن قوموں نے آپنے لوہاروں کو عزّت دی ہوئی ہے ـ
مگر ان میں پاکستان کا جهنڈا نہیں ہے ـ
پاک موج کا ملک پاکستان ـ

Airand_spaceshow4

یه ویسا هی جہاز ہے جیسا ایک دفعه چیني لوگوں نے اتار لیا تها اور امریکی صدر کے معافی مانگنے پر ٹوٹے ٹوٹے کر کے امریکا کو واپس کر دیا تها ـ
اسی ماڈل کا ایک جہاز شمالي کوریا نے بهي اتار لیا تها مگر اس خبر کو ـ ـ کٹے کوڈی ـ ـ کر دیا گیا تھا ـ



Airand_spaceshow8

یه هے اے تین سو اسّی ائر بس فرانسیسی تکنیک کا شہکار ـ
میرے خیال میں تو اس ائر بس کو بنانے والے لوہار ترکهان کمال کے لوگ ہیں ـ
مگر پاکستان کا کوئی بهی نسلی چیز کہـ سکتا هے ـ
که
پهر کیا هے ؟ ہیں تو کمّی لوگ ای ناں

Popular Posts